couple, romance, love-2705249.jpg

Novel _____My Possessive Mafia

Writer_____Barbie Boo

Episode____#2

تم مجھ سے کیوں ڈر رہی ہوں آخر ؟ دیکھوں میں جانتا ہوں کے تمہیں مجھ سے ڈر لگ رہا ہے لیکن اب اتنا بھی مت ڈرو۔ ہماری شادی ہوئی ہے ۔ اب ہم ایک نئی رشتے میں بندھ چکے ہیں۔ تم سمجھ رہی ہو نا میری بات پیاری روبی ۔

ویسے ان تین سالوں بعد تمہیں اس طرح اپنے پاس دیکھ کے بہت اچھا لگ رہا ہے ۔ تم نے مس تو کیا ہو گا مجھے؟

لیو روبی کے قریب ہوتے اس کے کان میں سرگوشی کر رہا تھا ۔روبی کا دل بے ترتیب دھڑک رہا تھا اس کا حلق خشک ہو چکا تھا ۔لیو کی گرم سانسیں اسے اپنی گردن پہ محسوس ہو رہی تھی ۔

مجھے نیند آرہی ہے میں بہت تھک گئی ہوں میں سونا چاہتی ہوں۔

وہ نیند کا بہانہ بناتی خود پہ کمبل اوڑھنے لگی۔

لیکن مجھے نیند نہیں آ رہی ۔

وہ کمبل کو کھینچتے دور کرتے ہوئے بولا ۔

کیا تم شرما رہی ہو؟

لیو کے لہجےمیں شرارت جھلک رہی تھی۔

تم مجھے پسند نہیں ہوں اور نہ ہی میں یہ شادی کرنا چاہتی تھی ۔ یہ زبردستی کی شادی ہے ۔ اور بہتر ہے کہ تم مجھ سے دور ہو تو ۔۔ بالکل ویسے ہی جیسے ان تین سالوں میں تم کبھی نظر نہیں ہے ۔

روبی کی باتوں سے شکوے جھلک رہے تھے۔ اس کی بات سن کر لیو کے چہرے پہ سنجیدگی در آئی تھی وہ روبی کو دیکھنے لگا۔

کیامیں نے تم سے پوچھا کہ میں تمہیں پسند ہوں یا نہیں کیا میں نے تم سے یہ پوچھا کہ یہ شادی تمہاری مرضی ہوئی یا نہیں تو جو بات میں نہ پوچھو وہ تم مجھے بتا نہیں سکتی اور نہ دوبارہ یہ سب کچھ کرنے کی کوشش کرنا میں جانتا ہوں تم ابھی کچھ نہیں جانتی اس بارے میں کہ کیسے رہنے کیا کرنا ہے کیا نہیں کرنا تو فکر نہیں کرو تمہیں سب سکھا دوں گا ایک بات اچھی طرح ذہن نشین کر لو کہ یہاں میری مرضی چلتی ہے یہ لیوکا مینشن ہے اور اب تم لیو کی بیوی ہو اس لئے اب تمہیں صرف اور صرف میری بات ماننی پڑے گی میری مرضی ہی تمہاری مرضی ہوگی اب سے میری پسندیدہ تمہاری پسند ہوگی ۔

میں جانتا ہوں بہت پیاری لڑکی ہو تم بہت جلدی سب کچھ سیکھ جاؤں گی سمجھ رہی ہونا میری بات ؟

لیو روبی کے گال پہ ہلکے سے ہاتھ پھیرتے محبت سے کہہ رہا تھا جب کہ اس کے چہرے پہ سنجیدگی چھائی ہوئی تھی ۔

روبی کے حلق میں ہی آواز پھنس گئی ۔وہ بس لیو کو ایک نظر دیکھ کے رہ گئی ۔وہ جانتی تھی کہ کچھ ایسا ہی ہونے والا ہے ۔

لیکن اتنی جلدی یہ سب ہوگا اسے اندازہ نہیں تھا کے شادی کی پہلی رات ہی لیو اسے یہ سب کہے گا اسے دل ہی دل میں برا لگا تھا لیکن وہ لب سکیڑ کے رہ گئی ۔

چلو اب بتاؤ مجھے کہ تین سالوں میں تم نے مجھے مس کیا اور کتنا مس کیا ؟ میں جانتا ہوں کہ تم نے مجھے یار تو بہت کیا ہوگا آخر کار ہم اتنے اچھے دوست رہے تھے ۔

لیو روبی کی گود میں سر رکھتے اس کے ایک ہاتھ کو اپنے گال پر رکھتے اور دوسرے ہاتھ کو اپنے سینے پر رکھتے محبت سے کہنے لگا۔

روبی کچھ نہ بولی ۔

میں تم سے کچھ پوچھ رہا ہوں جواب دو مجھے۔

لیونے روبی کے چہرے پہ نظر رکھتے ہوئے سنجیدگی سے پوچھا اس کے لہجے کی سختی روبی کو محسوس ہوئی تھی ۔

نہیں میں نے بالکل بھی مس نہیں کیا۔

اس نے صاف صاف جھوٹ بولا ۔لیو نے اپنی ہنسی دانتوں تلے دبا ہی تھی وہ جانتا تھا کہ وہ جھوٹ بول رہی ہے ۔

اوہو یہ تو بہت برا ہوا ۔ تم نے تو یہ بہت بڑی گستاخی کی ہے اور اب تمہیں سزا ملے گی بہت بڑی سزا کیونکہ تم نے لیو کو یعنی اپنے ہونے والے شوہر کو پورے تین سال تک یاد نہیں کیا ۔

وہ اٹھ کے سیدھا ہو بیٹھا اور مصنوعی غصے سے کہنے لگا ۔

کیا مطلب کیسی سزا میں کچھ سمجھی نہیں ۔

وہ ڈرتے ہوئے بولی لیونے ہنسی دانتوں تلے دبا ئی تھی اور اسے بھی بھی مصنوعی غصے سے دیکھ رہا تھا۔

فکر نہیں کرو میری پیاری بیوی تمہیں ابھی سمجھ آجائے گا اب تمہیں سزا ملے گی نا ۔

تم ایسا کیسے کر سکتے ہو؟

وہ تقریبا روتے ہوئے بولی تھی ۔

نو نو تم نہیں آپ مجھے آپ کہہ کے پکارو ۔ میں تمہارا شوہر ہوں اور ویسے بھی تم مجھ سے تین سال چھوٹی ہوں اس لیے آپ کہہ کے پکارا کرو یہ دوسری غلطی ہے جو تم نے کی ہے اب اس کی بھی سزا ملے گی ۔

لیو روبی کے قریب ہوتے اس کے چہرے پر جھکتے ہوئے سرگوشی کے عالم میں کہہ رہا تھا ۔جبکہ روبی کی سانسیں تیز ہونے لگی تھی ۔اسے اپنے جسم میں کپکپاہٹ سے محسوس ہو رہی تھی اور لیو یہ سب نوٹ کر رہا تھا اور لطف اٹھا رہا تھا۔

آخر کیوں ڈر رہی ہو تم ؟ اگر کسی کو پتہ چلا کہ لیوکی بیوی اتنی ڈرپوک ہے تو بہت مذاق اڑائیں گے ۔

وہ روبی کے گال پہ ہلکے سے بائٹ کرتے شرارت بھرے لہجے میں کہہ رہا تھا۔

میں اس سب کے لیے تیار نہیں ہوں پلیز مجھ سے دور رہیں۔

وہ رونے لگی۔ لیو کو روبی کا جسم کانپتا ہوا محسوس ہورہا تھا۔ وہ اس سے دور ہوا۔

اسے روتا دیکھ کے لیو کے چہرے پہ پریشانی چھائی تھی وہ فکرمند ہوا تھا۔ اسکے سر پہ نرمی سے ہاتھ پھیرتے وہ محبت سے کہنے لگا۔ روبی اسے دیکھنے لگی اسکے لہجے میں نرمی و محبت محسوس کرکے وہ چپ ہوگئی۔

گڈ گرل! تم سونا چاہتی ہو تو ٹھیک ہے سوجاؤ، صبح بات کرلیں گے ہم۔ تمہیں سب سمجھا دوں گا میں۔

وہ روبی پہ کمبل ڈالتے ہوئے بولا۔ وہ آرام سے لیٹ گئی اور اپنا چہرہ بھی کمبل میں چھپا لیا۔ لیو کے لبوں پہ مسکان ابھری تھی۔ وہ اسکے برابر میں لیٹ گیا۔

اپنا رخ دوسری طرف کرتے وہ چپ چاپ سوگیا۔

***************

صبح اسکی آنکھ کھلی تو خود کو کسی کے مضبوط حصار میں پاکے وہ چونکتے ہوئے دیکھنے لگی۔

لیو گہری نیند میں روبی کو مضبوطی سے اپنے سینے میں دپوچے سویا ہوا تھا۔ روبی نے لیو کی طرف منہ کا رخ کیا اور اسے دیکھنے لگی۔

وہ سوتے ہوئے بھی چہرے پہ سنجیدگی سجائے ہوئے تھا۔

وہ کافی پر کشش شخصیت رکھتا تھا۔ وہ اسکے چہرے کے نقوش کو غور سے دیکھنے لگی۔

دھیرے سے اسکے گال پہ انگلی رکھی اور ہٹا لی۔

روبی کے خوبصورت لبوں پہ مسکراہٹ ابھری تھی اسکے اپنا اوپر والا لب دانتوں تلے دبایا کہ کہیں وہ جاگ نہ جائے۔

ہلکے سے لیو کے ایک ایک نقش پہ اپنی شہادت کی انگلی پھیرنے لگی۔

لیو کو اپنے چہرے پہ کچھ نرم سا حرکت کرتا محسوس ہورہا تھا پر وہ نیند میں ڈوبا رہا۔

کیا لیو مجھ سے پیار کرتا ہے؟ شاید نہیں مجھے یقین ہے کہ اس نے بھی یہ شادی صرف اور صرف دو خاندانوں کی روایت برقرار رکھنے کے لیے کی ہے مطلب سمجھوتہ ہوا یہ تو۔ کیا ہم اپنی ساری زندگی ایسے ہی گزار دیں گے؟

مجھے لگا تھا کہ اٹھارہ سال کی ہونے کے بعد میں آزاد ہوجاؤں گی ۔ یہ دولت یہ شہرت اور یہ انکا مافیا ہونا یہ سب نہیں پسند مجھے، میں اس سب سے دور جانا چاہتی تھی لیکن اب ہمیشہ کے لیے اس مینشن ہاؤس میں قید ہو گئی ہوں۔

وہ لیو کی گردن پہ اپنا ہاتھ رکھے اپنا سر اسکے سر سے ٹکائے سوچے جارہی تھی۔

میں تم سے نفرت کرتی ہوں لیو ، تمہارے ساتھ رہنا میری مجبوری ہے۔ میں جانتی ہوں کہ اگر میں نے بھاگنے کی کوشش کی تو تمہارا خاندان میری فیملی کو جان سے مار ڈالے گا۔ پر میں کوئی نہ کوئی راستہ نکال لوں گی یہاں سے اور تم سے دور جانے کا۔

روبی نے اٹھنے کی کوشش کی پر لیو کا مضبوط بازو ابھی بھی اسکی کمر کو اپنی گرفت میں لیے ہوئے تھا۔وہ ایک سرد آہ بھر کے رہ گئی۔

گڈ مارننگ میری پیاری بیوی!

لیو نے اسے مزید خود میں بھینچتے ہوئے خمار آلود آواز میں اسکے کان میں سرگوشی کی۔

گڈ مارننگ!

روبی نے سپاٹ سے انداز میں کہا اور خود کو اسکے حصار سے آزاد کرنے کی تگ ودو کرنے لگی۔

تو میری پیاری بیوی میرے جاگنے کا انتظار کررہی تھی۔

وہ روبی کے گال پہ اپنی بیئرذ رب کرتے ہوئے کہنے لگا۔ جبکہ وہ اسکے سینے پہ دونوں ہاتھ رکھے اسے خود سے دور کرنے کی کوشش کررہی تھی۔

ابھی تو پورے چوبیس گھنٹے بھی نہیں ہوئے ہماری شادی کو اور تم سے ابھی سے دوریاں بڑھانا شروع کردی ہیں۔ مجھے قریب رہنا پسند ہے بے حد قریب۔

وہ روبی کی آنکھوں میں جھانکتے معنی خیز انداز میں کہہ رہا تھا۔

وہ۔۔۔مجھے بھوک لگ رہی ہے۔

وہ اپنے خشک ہوتے گلابی لبوں پہ زبان پھیرتے بولی۔

پیاس بھی لگ رہی ہے کیا؟

لیو شرارت بھرے لہجے میں کہتا اسکے سوکھتے ہونٹوں پہ اپنا انگوٹھا پھیرتے ہوئے بولا۔ روبی کی ہارٹ بیٹ تیز ہونے لگی جو کہ لیو کو صاف سنائی دے رہی تھی۔ اسکو گھبراتا دیکھ کے لیو کو مزا آرہا تھا پر وہ صبح صبح اسے زیادہ تنگ نہیں کرنا چاہتا تھا اسی لیے دھیرے سے اس سے الگ ہوا اور بیڈ کراؤن سے ٹیک لگا کے اپنے دونوں بازو سینے پہ پھیلائے روبی کے چہرے کے اڑتے رنگ دیکھنے لگا۔

جاؤ تم شاور لے لو پھر اکھٹے ناشتہ کریں گے۔

وہ ہلکے سے مسکراتے ہوئے بولا تو روبی بنا کچھ بولے بیڈ سے اترنے لگی۔

مجھے بلیو کلر پسند ہے۔ اسی رنگ کا سوٹ پہننا۔

لیو نے کہا تو روبی کے چہرے پہ ناگواری چھائی تھی جو کہ لیو نے نوٹ کیا تھا۔ وہ باتھروم چلی گئی۔

کتنی ناراض ہو تم مجھ سے پیاری لڑکی شاید نفرت کرنے لگی ہو مجھ سے۔ کاش میں تمہیں سب کچھ بتا پاتا۔

وہ سرد آہ بھرتے اپنی موند گیا۔

موبائل رنگ ہوا تو لیو نے آنکھیں کھولی اور سائیڈ ٹیبل پہ رکھے موبائل کو اٹھاتے دیکھنے لگا۔ اسی وقت روبی باتھ ٹاول لپیٹے باتھروم سے نکلی اور ڈریسنگ روم میں چلی گئی بنا لیو کی طرف دیکھے۔

لیو بیڈ سے اترا اور تیزی ڈریسنگ روم کی طرف بڑھا۔

میں کوئی ہیلپ کروں؟

اس سے پہلے کہ روبی ڈور لاک کرتی لیو ڈریسنگ روم میں انٹر ہوتے ہوئے بولا۔

نہیں، کوئی ہیلپ نہیں چاہیئے۔می۔۔۔میں خود دیکھ لوں گی۔

اسطرح اچانک لیو کی اس حرکت پہ روبی کے چہرے کی ہوائیاں اڑی تھیں وہ گھبراتے ہوئے بولی جبکہ لیو سکون سے اسکے چہرے کا طواف کررہا تھا۔

اتنا گھبرا کیوں رہی ہو؟ میں کوئی غیر تو نہیں ہوں تمہارا شوہر ہوں اور بتایا تھا نا میں نے کہ مجھے قریب رہنا پسند ہے۔ کیا تمہیں ایک بار بات سمجھ نہیں آتی؟ یا مجھ سے لاڈ کررہی ہو ہونہہ؟

https://www.barbienovels.com/my-possessive-mafia-episode-1/

By barbie boo

Hey! I'm Barbie a novelist. I'm a young girl with a ROMANTIC soul. I love to express my feelings by writing.

Leave a Reply

Your email address will not be published.